Tag Archives: punishment

Quite Unlikely…

لبِ دریا، جام و مینا، مہ کامل نظر آتا ہے

میرے  یار تیرا بچنا،  مشکل  نظر آتا ہے

A quiet beach

The cup and the measure, the full moon

It is quite unlikely

That you’ll survive this

 

ابھی ہٹائیں کے نہ یہ لٹیں تیرے رخ سے

چاند چہرہ پسِ زلف، بمشکل نظر آتا ہے

So should I brush away?

The stray hair strands from your face

You moon like beauty

Appears somewhat hidden

 

اک نگاہ میں جان گئے تیرے دل کے راز

صاف چہرے پے، حالِ  دل  نظر  آتا ہے

With one look

I knew what you hid

Your face reveals

What your heart conceals

 

کون کہتا ہے کے خدا دکھائی نہیں دیتا

ہر جاہ وہ جلوہ نما!  بلکل نظر آتا ہے

And who says

That beauty can not be seen

I see her signs everywhere

I absolutely do!

 

کدھر ہے وہ  گستاخ  سچ گو شاعر؟

وہی یہاں سزا کے قابل نظر آتا ہے

Where is that inordinate poet

That dares to speak the truth

He deserves

A severe punishment

 

کون مانے گا؟ یہ صورت اور یہ حرکت

لوگ بولیں استاد شکلأ، عاقل نظر آتا ہے

And who will believe

A match between visage

And habits

The people say he looks reasonable enough

 

Advertisements

Leave a comment

Filed under Ghazal, Poetry

Living in the city…

دلِ خطاکار میرا،  گنہگاروں کی  بستی ہے

نفسِ گناہگار میرا. خطاکاروں کی بستی ہے

My sinful soul is a city

Populated by sinners dear to me

And my ego

Populated by own misdeeds

 

وہ   ہر   بات   بڑے   تحمل   سے  سنتے  ہیں

الہی بتوں کی بستی تو، نیکاروں کی بستی ہے

The false idols

Listen kindly to whatever I say

Dear God, this pagan temple

Seems to be filled with virtue

 

خلوصِ دل سے خالی کیا، ہم نے خدا کا گھر

مسجد کیا خاک ہے؟ ریاکاروں کی بستی ہے

And with dedication

We destroyed the house of worship

What is it that remains?

A dwelling of hypocrites

 

حالاتِ  شہر اب  انساں  کو  حیواں  کر  دیں

شہر عزیز لاکھ سہی، سزاواروں کی بستی ہے

As much as I love the city

The conditions therein

Turn men into animals

It’s often a punishment to live there

 

ہم  دل   کو   بیچتے  رہے   خریدار  نہ  ملا

چلو پھر چلیں جدھر، خریداروں کی بستی ہے

And though I kept my heart for sale

I could not find the right buyer

Let us go then

To the city of the buyer

 

کچھ  ایسا  طلسم  ہے  تیری  نظر  کا  کے

شہرِ دشمناں بھی، نازبرداروں کی بستی ہے

And there is a certain spell

In your vision

Which turns this wasteland

Into something quite bearable

 

کآش نگر ایسا بھی ہو، دیکھ جسے میں کہوں

یہ جگہ استاد کے، غمخاروں کی بستی ہے

I wish to find a land

Gazing upon which I can say

Yes,

It is the land of my friends

Leave a comment

Filed under Ghazal, Poetry

The search for death… تلاشِ مرگ

تلاشِ مرگ ابعث، شہرِ جاناں سے چلنا سہی ہے

یاں  توں  ہی بتا اے دل،   در در  پھرنا سہی ہے؟

The search for death

Is useless

Or tell me my heart

Is it ok to go from door to door searching for it?

j

کتنی بہاریں اور دیکھنی ہیں اداس آنکھوں سے؟

دورِ خزاں  ہے عمر کا،  جہاں  سے چلنا سہی ہے

How many more springs

Will you see with your sad eyes?

Fall has arrived

Its time to leave the world

j

اس کے ہمنشین ہونے سے، آج  نشہ سا ہو گیا

نشے میں غلطی ہوئی، نشے میں گرنا سہی ہے

I felt intoxicated

While sitting with her

We made mistakes while intoxicated

I fell when I was inebriated

j

پاواشِ جرمِ عشق  میں   پھر  عدالت  گئے تو

حکمِ قاضی یہی تھا کے، تیرا مرنا سہی ہے

I was accused of falling in love

By the courts and the qazi

The punishment as always

Was death

j

ہاتھوں میں وہ خنجر لئے گھومتی پھرتی ہے

ابھی کچھ دیر ٹک بیٹھ، چھپے رہنا سہی ہے

She stalks you

With daggers drawn

Sit down here

Hide for a while

j

نفسِ امارہ و مطمین یکجان بھی ہوتے ہیں

کچھ  غلط  بات تو نہیں، انکا ملنا سہی ہے

The heart that seeks

And the one which is happy

Can be possibly found

In the same body

j

کیا  کیا  نہ کہا  انہوں  نے  آج  ہمارے  آگے

ہم نے بس اتنا ہی کہا، آپ کا کہنا سہی ہے

What was I not accused of

By her today

And all I could say was

You are right

j

فطری  سے تو احکام  ہیں تیرے  مذہب  کے

دل جانتا ہے تیرا, کیا غلط اور کیا سہی ہے

The orders of your faith

Are quite natural

And your heart knows

Right from wrong

j

تعرف  ہمارا اس طرح  سے دوست  کرتے  ہیں

استاد ذرا دیوانہ سا ہے، آدمی ورنہ سہی ہے

My friends introduce me

By saying

He is a little mad

But otherwise he is a good man

2 Comments

Filed under Ghazal, Poetry