Tag Archives: Abraham

Of things I do not know

کہئیں  رقیب نے باتیں، ذرا کھری کھری

ہمیں یوں لگا وہ باتیں ، تھیں سڑی سڑی

Her boyfriend used harsh words

But for a moment

I felt that he too

Felt jealous

 

نظارہِ    قدرت    کے    مقابل    تیرا    رخ

دیکھ تجھ کو سوجھی، مجھکو ہری ہری

A vista from nature opposite

A vision of you

I do not know

Which gladdens my heart more

 

کب تک چلے گی یاں، روز و شب کی گرداں

ہانے حالِ  دلِ  افسردہ،  طبیعت  مری  مری

And how long do you plan

To cry out day and night

‘O my sad heart

My sad condition’

 

فرقت کے معاملے میں، ہم ایک سے تو نہ تھے

ہم  تو  بہت  جرئ  رہے،  وو  رہی  ڈری ڈری

When it came to separating

We were not alike

I was quite brave

and she afraid

 

پھر آیا بتکدے میں، ابراہیم خلیل الله

کہو صنم سے اب کہ، اوم ہری ہری

And once again

We have Abraham enter the temple of

False idols

Dare them to say falsehoods now

 

ناچیز  سا  انساں  ہے، استادِ  بے  طرح

کیوں ہے کرتا اس طرح، باتیں بڑی بڑی

And he is a humble man

Very out of sorts

Why does he

Speak of things he doesn’t know?

 

Advertisements

Leave a comment

Filed under Ghazal, Poetry